A A A A A
Bible Book List

ہوسیع 13 Urdu Bible: Easy-to-Read Version (ERV-UR)

اسرائیل نے اپنی بربادی خود کر لی

13 “جب افرائیم بو لا، دوسرے لوگ ڈرسے کانپ گئے۔ اس نے اپنے آپکو اسرائیل میں اہم بنایا۔ لیکن بعل کی پرستش کے سبب سے گنہگار ہو کر فنا ہو گیا تھا۔ پھر اسرائیل زیادہ سے زیادہ گنا ہ کر نا جا ری رکھا۔ اسرائیلوں نے اپنے لئے بت بنایا۔کاریگرچاندی سے ا ن خوبصورت مورتیوں کو بنانے لگے اور پھر وہ لوگ اپنی ان مورتیوں سے باتیں کرنے لگے۔ وہ لوگ ان مورتیوں کے آگے قربانیاں پیش کرنی شروع کئے۔ بچھڑوں کو وہ چوما کر تے ہیں۔ اس سبب سے وہ لوگ صبح کی اس دھند کی مانند ہونگے جو آتی ہے اور پھر جلد ہی غائب ہو جا تی ہے۔ وہ اس بھو سی کی مانند ہونگے جسے ہوا کھلیان سے اڑا لے جا تی ہے۔ وہ دھوئیں کی مانند ہونگے جو چمنی (آتش دان ) سے نکلتاہے اور پھر غائب ہو جا تا ہے۔

“میں خداوند تمہا را خدا تب سے ہو ں جب تم لوگ مصر میں ہوا کر تے تھے۔ میرے علاوہ تم کسی دوسرے خدا کو نہیں جانتے تھے۔ وہ میں ہی ہو ں جس نے تمہیں بچا یا تھا۔ میں بیابان میں تمہیں جانتا تھا۔ میں تمہیں اس سوکھی زمین میں جانتا تھا۔ میں نے اسرائیلیوں کو کھانے کو دیا۔ انہوں نے وہ کھانا کھایا۔ اسلئے وہ گھمنڈی ہو گئے۔ اور مجھے بھول گئے۔

“اس لئے میں ان کے لئے شیر ببر کی مانند ہونگا۔راستے کے کنارے گھات لگا ئے چیتا جیسا ہوجا ؤں گا۔ میں ان پر اس ریچھ کی طرح جھپٹ پڑونگا، جیسے اس کے بچے چھین لئے گئے ہوں۔ میں ان پر حملہ کرونگا۔ میں ان کے سینے چیر پھاڑدوں گا۔ میں اس شیر ببر یا کسی دوسرے ایسے وحشی جانور کی مانند ہو جا ؤں گا جو اپنے شکار کو پھاڑ کر کھاجا تا ہے۔

خدا کے قہر سے اسرائیل کو کو ئی نہیں بچا سکتا

“اے اسرائیل! میں نے تیری مدد کی تھی۔لیکن تو نے مجھ سے منہ موڑ لیا۔اسلئے اب میں تجھے برباد کردونگا۔ 10 کہاں ہے تیرا بادشا ہ؟ تیرے سبھی شہرو ں میں وہ تجھے نہیں بچا سکتا ہے۔ اور تیرے سامنے قاضی کہاں ہیں جن کی بابت تُو کہتا تھا کہ مجھے بادشا ہ اور امراء عنا یت کر؟ 11 میں غضبناک ہوا اور میں نے تمہیں ایک بادشا ہ دے دیا۔ میں اور زیادہ غضبناک ہوا اور میں نے تم سے اسے چھین لیا۔

12 “افرائیم نے اپنا جرم چھپانے کا جتن کیا۔
    اس نے سو چا تھا کہ اس کے گناہ پو شیدہ ہیں۔
13 اس کی سزا ایسی ہو گی جیسے کو ئی عورت دردِزہ میں مبتلا ہو تی ہو۔
    لیکن وہ فرزند بے وقوف ہو گا۔
اس کی پیدا ئش کی گھڑی آئے گی۔
    لیکن وہ فرزند زندہ نہیں بچے گا۔

14 “کیا میں انہیں قبر کی قوت سے نجات دونگا؟
    کیا میں انہیں موت کے پکڑ سے چھڑاؤنگا؟
اے موت تیری مہلک و با کہاں ہے؟
    اے موت تیری قوت کہاں ہے؟
میں ان لوگوں پر رحم کرنے کا کو ئی وجہ نہیں دیکھتا ہوں۔
15 اگر چہ افرائیم اپنے بھا ئیوں میں سب سے زیادہ کامیاب ہے۔
    لیکن پو ربی ہوا آئے گی۔ اور خداوند کا دم (سانس) بیابان سے آئے گا
اور اسرائیل کا منبع سو کھ جا ئے گا
    اور اس کا چشمہ بھی خشک ہو جا ئے گا۔
    وہ آندھی اسرائیل کے خزانے سے ہر قیمتی شئے کو لے جا ئے گی۔
16 سامریہ کو سزا دی جا ئے گی
    کیوں کہ اس نے اپنے خدا سے منہ پھیرا تھا۔
اسرائیلی تلواروں سے ماردیئے جا ئیں گے،
    ان کی اولاد کے چیتھڑے اڑا دیئے جا ئیں گے
    اور حاملہ عورتو ں کے پیٹ چاک کئے جا ئیں گے۔”

Hosea 13 New International Version (NIV)

The Lord’s Anger Against Israel

13 When Ephraim spoke, people trembled;
    he was exalted in Israel.
    But he became guilty of Baal worship and died.
Now they sin more and more;
    they make idols for themselves from their silver,
cleverly fashioned images,
    all of them the work of craftsmen.
It is said of these people,
    “They offer human sacrifices!
    They kiss[a] calf-idols!
Therefore they will be like the morning mist,
    like the early dew that disappears,
    like chaff swirling from a threshing floor,
    like smoke escaping through a window.

“But I have been the Lord your God
    ever since you came out of Egypt.
You shall acknowledge no God but me,
    no Savior except me.
I cared for you in the wilderness,
    in the land of burning heat.
When I fed them, they were satisfied;
    when they were satisfied, they became proud;
    then they forgot me.
So I will be like a lion to them,
    like a leopard I will lurk by the path.
Like a bear robbed of her cubs,
    I will attack them and rip them open;
like a lion I will devour them—
    a wild animal will tear them apart.

“You are destroyed, Israel,
    because you are against me, against your helper.
10 Where is your king, that he may save you?
    Where are your rulers in all your towns,
of whom you said,
    ‘Give me a king and princes’?
11 So in my anger I gave you a king,
    and in my wrath I took him away.
12 The guilt of Ephraim is stored up,
    his sins are kept on record.
13 Pains as of a woman in childbirth come to him,
    but he is a child without wisdom;
when the time arrives,
    he doesn’t have the sense to come out of the womb.

14 “I will deliver this people from the power of the grave;
    I will redeem them from death.
Where, O death, are your plagues?
    Where, O grave, is your destruction?

“I will have no compassion,
15     even though he thrives among his brothers.
An east wind from the Lord will come,
    blowing in from the desert;
his spring will fail
    and his well dry up.
His storehouse will be plundered
    of all its treasures.
16 The people of Samaria must bear their guilt,
    because they have rebelled against their God.
They will fall by the sword;
    their little ones will be dashed to the ground,
    their pregnant women ripped open.”[b]

Footnotes:

  1. Hosea 13:2 Or “Men who sacrifice / kiss
  2. Hosea 13:16 In Hebrew texts this verse (13:16) is numbered 14:1.
New International Version (NIV)

Holy Bible, New International Version®, NIV® Copyright ©1973, 1978, 1984, 2011 by Biblica, Inc.® Used by permission. All rights reserved worldwide.

Viewing of
Cross references
Footnotes